نثر کی تعریف

نثر لفظ تین حروف سے مل کر بنا ہے۔ جن میں ن،ث،ر شامل ہیں۔نثر اردو ادب میں خاص اہمیت کی حامل ہے۔نثر ایک ایسی اصطلاح ہے جس میں مصنف، ادیب،یا لکھاری بغیر کسی موزوں صنعت کے اپنے خیالات کا اظہار کرتا ہے۔اردو ادب کی بنیاد دو اصناف پر پڑی ہے جن میں شاعری اور نثر شامل ہیں۔ اگر یوں کہا جائے کہ نثر اردو ادب کے ایک بازو کی حیثیت رکھتی ہے تو غلط نہ ہو گا۔اردو ادب کو اگر شاعری نے عروج تک پہنچایا ہے تو نثر نےبھی پھر اس کو عروج پر قائم رکھنے کی بھرپور کوشیش کی ہے۔

اردو نثر کا باقاعدہ آغاز 1800 میں فورٹ ولیم کالج کے قیام کے ساتھ ہوا۔اس کالج کی بدولت اردو نثر کی پروان چڑھتی بیل کی مزید آبیاری کی گئی۔فورٹ ولیم کالج میں شعبہ ہندی(یاد رہے اردو کا پرانا نام ہندی تھا) کے صدرِ شعبہ ڈاکٹر جان گلکریسٹ تھا۔یہاں پر اور بھی بہت سےاردو ادیبوں نے اپنی صلاحیتوں کے جوہر دیکھاتے ہوئےاردو نثر کا دامن شاہکاروں سے بھر دیا۔اور یہ شاہکار دورِجدید میں اپنی ایک خاص اہمیت رکھتے ہیں۔

اردو نثر میں مصنفین اپنے خیالات کا اظہار علمِ بیان کے سانچوں میں ڈھال کر بیان کرتے ہوئے دیکھائی دیتے ہیں۔دورِ جدید میں شاعری کی نسبت نثر عام عوام کو زیادہ متاثر کرتی نظر آتی ہے۔نثر کو اب مزید شاخوں میں تقسیم کیا جا چکا ہے جن میں اردو تحقیق، اردو تنقید، اردو طنز ومزاح، انشائیہ، ناول،افسانے،مضامین، افسانچے،آپ بیتیاں،رپورتار، سفرنامے،مقالے، مکالمے،اور صحافتی کالم شامل ہیں۔اردو نثر کے عظیم نثر نگاروں میں مولانا محمد حسین آزاد، الطاف حسین حالی، میر امن،فرحت اللہ بیگ،پطرس بخاری،ابنِ انشاء اور سرسید احمد خان شامل ہیں۔

Copyright © 2016 - 2018 Explainry.com | All Rights Reserved