Easy Explanation Notes with Examples

Urdu Word and its Types – لفظ اور اس کی اقسام

لفظ کیا ہے؟

اردو اصطلاح میں انسان کے منہ سے بولتے ہوئے جو کچھ ادا ہوتا ہے اسے لفظ کہتے ہیں۔لفظ کے لغوی معنی بامعنی بول۔ کلمہ۔ اور ناطق کے ہیں۔الفاظ ہی وہ بنیادیں ہیں جن کی بدولت جملے وجود میں آتے ہیں ۔اگر لفظ نہ ہوں تو جملےنہیں بنتے۔ مگر حیران کن بات یہ ہے کہ چینی زبان الفاظ سے عاری ہے۔ اس زبان میں الفاظ کے بجائے علامات کا استعمال کیا جاتا ہے۔

لفظ کی اقسام؛

لفظ کی دو اہم اقسام درج ذیل ہیں ؛

  ا۔ کلمہ          ب۔ مہمل

ا۔کلمہ؛

یہ وہ الفاظ شمار کیے جاتے ہیں جس کو سننے سے کچھ معنی سمجھ میں آئیں جیسے؛ روٹی۔ پانی۔ کمپیوٹر۔ ٹیلی وژن وغیرہ ان الفاظ سے علم ہوتا ہے کہ ان کا تعلق کھانے پینے کی اشیاء اور ٹیکنالوجی سے ہے۔ کلمہ کی آگے تین اقسام یہ ہیں؛

اسم؛

اسم سے مراد وہ کلمہ ہے جو کسی شخص کا نام ہو یا پھر وہ کلمہ ہے جو کسی شخص ۔جگہ۔ چیز۔مقام۔تصور یا کیفیت  کا نام ہو۔ جس میں زمانہ اور کام بیک وقت دونوں موجود نہ ہوں۔ اگر زمانہ موجود ہے تو وقت نہیں ہو گا اور اگر وقت ہے تو زمانہ نہیں پایا جائے گا۔

فعل؛

فعل کے معنی کام کرنا کے ہیں۔یا فعل جس میں کسی کام کا کرنا ہونا یا سہنا پایا جائے۔اس میں کام اور زمانہ دونوں موجود ہوتے ہیں۔

حرف؛

حرف وہ کلمات ہیں جو دیگر الفاظ ک ساتھ ملے بغیر پورے معنی ادا نہ کرے۔ یہ اسم اور فعل کو آپس میں ملاتا ہے۔اس کے بغیر اسم اور فعل دونوں بے کار ہیں۔علی نے دوکان سے کتاب لی۔ میں علی اسم ہے۔لی فعل ہے اور سے حرف ہے۔

ب۔مہمل؛

مہمل ایسے الفاظ ہوتے ہیں جو بے معنی ہوں اور سننے میں ان کا کچھ مطلب سمجھ میں نہ آئے۔ مثلاً پانی وانی۔ روٹی ووٹی۔ کھانا وانا۔ یہاں پانی کے ساتھ وانی بے معنی لفظ ہے اس طرح کے الفاظ مہمل کہلاتے ہیں ۔ مگر ان الفاط کو گرائمر کا حصہ تصور نہیں کیا جاتا۔




Copyright © 2016 - 2019 Explainry.com | All Rights Reserved