علمِ نحو

علمِ نحو کیا ہے؟

نحووہ علم ہے جس میں اجزائے کلام کی صحیح ترتیب ، ترکیب، اور تعلقات باہمی کے متعلق تحقیق کی جاتی ہے۔مختلف کلمات کے باہمی ربط و تعلق کا پتا چلتا ہے۔ان کے جاننے سے انسان کلام میں غلطی نہیں کرتا۔علمِ نحو کہلاتا ہے۔

کلام سے کیا مراد ہے؟

کلام سے مراد یہ ہے کہ جب دو یا دو سے زیادہ کلمات ترتیب پائیں تو اسے مرکب کہتے ہیں۔اس کی دو اقسام ہیں جن میں مرکب تام اور مرکب ناقص شامل ہیں۔ مرکب تام ایسا جملہ یا مفید مرکب ہے جس کو سن کر پورا مطلب سمجھ میں آ جاتا ہے۔ جبکہ مرکب ناقص کو سننے سے پورا جملہ سمجھ میں نہیں آتا۔مثلاًمیرا دوست، ٹھنڈا پانی وغیرہ۔

کلام کی ذیلی اقسام؛

مرکب ناقص کی درج ذیل اقسام ہیں؛

مرکب استثنائی، مرکب اشاری،مرکب اضافی، مرکب توصیفی، مرکب امتزاجی، مرکب جاری، مرکب بدلی، مرکب ذوالحال،مرکب موضوع، مرکب ظرفی، تابع مہمل، عطف بیان و مبین،مرکب تاکیدی، مرکب عددی، مرکب تمیزی،مرکب عطفی۔

مرکب استثنیٰ؛

وہ مرکب ہے جو استثنیٰ اور مستثنیٰ منہ سے مل کر بنے اور ان کے درمیان میں حرف استثنیٰ واقع ہو۔مثلاً شاہد کے سوا سب لڑکے ۔ اس جملے میں شاہد مستثنیٰ اور لڑکے مستثنیٰ منہ اور حرف سوا حرف مستثنیٰ ہے۔

مرکب اشاری؛

وہ مرکب ہے جو اشارہ اور مشارالیہ سے مل کر بنے۔ جیسے یہ میز وہ کرسی وغیرہ۔

مرکب اضافی؛

وہ اسموں کے درمیان ایک معمولی سا تعلق پایا جاتا ہے اس تعلق کو اضافت کہتے ہیں۔اضافت کی بے شمار اقسام ہیں جن میں اضافت ابنی، اضافت استعارہ، اضافت بیانی، اضافت بہ ادنیٰ تعلق، اضافت تخصیصی، اضافت تشبیہی،اضافت تملیکی، اضافت توضیحی، اضافت توصیفی، اضافت ظرفی، وغیرہ شامل ہیں۔

مرکب امتزاجی؛

وہ اسم ہے جو دو اسموں سے مل کر بنے۔ مثلاً اعظم گڑھ، ایبٹ آباد محمد حسین وغیرہ۔

مرکب بدلی؛

وہ مرکب جو بدل اور مبدل منہ سے مل کر بنے۔ ان میں سے ایک اصلی غرض ہو اور دوسرے بالکل غرض نہ ہو۔جیسے انور کا چچا،یہاں انور کا چچا بدل ہے اور سلطان مبدل منہ ہے۔

تابع موضوع؛

وہ مرکب جس میں ایک بامعنی لفظ محاورے کے مطابق بے معنی لفظ استعمال کیا جائے۔کبھی تابع موضوع ،مبتوع سے پہلے آتا ہے۔ مثلاً رگڑا، جھگڑا وغیرہ۔

تابع مہمل؛

وہ مرکب ہے جس میں ایک بامعنی لفظ کے بعد محاورے کے مطابق مہمل لفظ استعمال کیا جائے۔مثلاًدانہ دنکا، اس میں دانہ متبوع ہے اور دنکا تابع مہمل ہے۔

مرکب تاکیدی؛

وہ مرکب ہے جو تاکید اور موکد سے مل کر بنے۔ان میں سے کلمہ دوسرے کی تاکید کرتا ہے۔ اس کا ذکر حرف تاکید میں ہم کر چکے ہیں۔ مثلاً سب عورتیں،اس میں سب حرف تاکید ہے اور عورتیں موکد ہیں۔

مرکب تمیزی؛

وہ مرکب ہے جو تمیز اور میمز سے مل کر بنے ۔مثلاً دس کلو گندم، پانچ میٹر کپڑا وغیرہ۔

Copyright © 2016 - 2018 Explainry.com | All Rights Reserved